آپ کی پسندیدہ چاکلیٹ

دنیا میں شاید ہی کوئی ایسا شخص گزرا ہو گا جس کو چاکلیٹ پسند نہ ہو۔ ساری دنیا میں روایت ہے کہ کسی کے گھر جا رہے ہو یا ۔۔۔کسی سے پیار کا اظہار کرنا ہو تو اپنے محبوب کو چاکلیٹس کا تحفہ دیا جاتا ہے۔ چاکلیٹ کی بڑی بڑی کمپنیاں دنیا بھر میں بے حد مقبول بھی ہیں اور بہت منافع کما رہی ہیں۔ چاکلیٹ نہ ہوتی تو یہ دنیا اتنی میٹھی جگہ نہ ہوتی۔ یہ 3,000 سال پہلے کی بات ہے، جب ماین اور ایز ٹک تہذیبوں نے ایک ایسا درخت دریافت کیا جو کوکو کا درخت تھا۔ کوکو کے درخت سے جو بینز اگتے تھے، انہوں نے ان بینز کو پیس کر دودھ میں ملانا شروع کر دیا۔ اتنے قدیم زمانے میں بھی وہ لوگ اس کو پیتے اور اس سے ایک خوشی اور متحرک پن محسوس

اور متحرک پن محسوس کرتے تھے۔ چاکلیٹ اصل میں اپنے اندر جو مٹھاس رکھتی ہے، اس کی وجہ سے یہ انسان کو یکدم متحرک بنا دیتی ہے۔جیسے کافی یا کولڈ ڈرنکس کا اثر انسان کو ایک انسٹنٹ توانائی کی صورت ملتا ہے۔ ماین اور ایز ٹک تہزیبوں میں چاکلیٹ کا استعمال بہت عام تھا۔ ایک وقت ایسا آیا کہ چاکلیٹ اتنی مقبول ہو گئی کہ انہوں نے چاکلیٹ کے بینز کو کرنسی کے طور پر استعمال کرنا شروع کر دیا۔

مزید پڑھیں  گرم پانی پینے کے بے تحاشہ فوائد جانئے اس رپورٹ میں

اس کو سکوں کی مانند قیمتی تصور کیا جانے لگا۔ یہاں تک کہ یہ قدیم تہذیبیں کچھ عرصہ چاکلیٹ کے درختوں کو پوجتی بھی رہیں۔ سولہویں صدی میں جب سپین نے ان تہذیبوں پر حملہ کیا تو انہوں نے ان کے اور اثاثوں کے ساتھ چاکلیٹ بھی چرا لی اور یہ جب یورپ واپس لوٹے تو چاکلیٹ کے بینز اپنے ساتھ لے گئے۔ انہوں نے یورپ جا کر چاکلیٹ کو متعا رف کر وایا اور اس طرح آہستہ آہستہ چاکلیٹ دنیا بھر میں مشہور ہوتی گئی۔ جو پراڈکٹ اصل میں اچھا ہو وہ اپنی مرکیٹنگ آپ کرتا ہے۔ اسی طرح چاکلیٹ کی کوئی مرکیٹنگ کرنے کی ضرورت پیش نہیں آئی بلکہ جو بھی کھاتا تھا اس کی لذت کا پرستار بن جاتا تھا۔ چاکلیٹ بچوں اور بڑوں میںیکساں طور پرپسند کی جاتی ہے۔

مزید پڑھیں  ادرک سے پیٹ کی چربی پگھلائے اور وہ بھی کچھ ہی دنوں میں

آج تو یہ زمانہ آگیا ہے کہ ہمارے بچوں کو مٹھائیوں کی کوئی سمجھ بوجھ نہیں ہے لیکن سب چاکلیٹ کھاتے رہتے ہیں اور بچہ بچہ جانتا ہے کہ کون کون سی کمپنی کی چاکلیٹ کیسی کیسی ہوتی ہے۔ اصل میں یہ مٹھائیوں کا اچھا متبادل بھی ہے کیونکہ چاکلیٹ میں بہت توانائی ہوتی ہے مگر اس میں کیلوریز بہت کم ہوتی ہیں۔ یہ موٹاپے کا باعث کبھی نہیں بن سکتی اور بچوں کو مٹھائیوں ، کیک ، سویٹس اور کینڈیز پر لگانے سے بہت بہتر ہے کہ آپ ان کو چاکلیٹ کی عادت ڈال دیں۔دنیا کے سب سے زیادہ بکنے والے پراڈکٹس میں سے ایک چاکلیٹ ہے۔ لوگ بیرون ملک سے آتے ہوئے بھی اپنے سارے خاندان کے لیے چاکلیٹس لاتے ہیں۔

مزید پڑھیں  کھانا کھانے کے بعد سونف کھانے کے فوائد

کیڈ بیری، مارز، سنیکرز، ٹوبلیرون اور کوالٹی سٹریٹ کی چاکلیٹیں دنیا بھر میں سب سے زیادہ مشہور ہیں ۔ چاکلیٹ کی مارکٹ بیکریز کی وجہ سے اور بڑھ چکی ہے کیونکہ کیکس، آئس کریم، کوکیز اور پیسٹریز میں بھی چاکلیٹ چپس کی صورت اس کا بہت استعمال ہوتا ہے۔ صرف یہی نہیں ہر شیز چاکلیٹ سیرپس بھی ہر سٹور میں دستیاب ہیں، بچوں کو دودھ میں ملا کر پلا دیں یا کیک پر آئیسنگ میں استعمال کر لیں۔ اب تو سفید چاکلیٹ بھی بچوں میں بہت مقبول ہے اور واقعی بہت لذیز بھی ہوتی ہے۔ چاکلیٹ کے پہلے بھی اتنے نئے نئے رنگ و روپ نکلتے رہے ہیں اور آگے آنے وقتوں میں اس کے پاڈکٹس میں مزید بہت زیادہ تجدید ہوتی رہے گی۔

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments