اسکول میں سزا کے طور پر 88 طالبات کے زبردستی کپڑے اُتروادئے گئ

ھارتی ریاست کے ایک اسکول میں سزا کے طور پر 88 طالبات کے زبردستی کپڑے اُتروادئے گئے۔ تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست آرناچل پردیش کے ایک اسکول میں ہیڈ ٹیچر سے متعلق نا زیبا الفاظ لکھنے پر88 طالبات کے بطور سزا زبردستی کپڑے اُتروادئے گئے۔ ضلع پاپم پئیر کے اسکول میں چھٹی اور ساتویں جماعت کی طالبات کو یہ سزا دی گئی۔پولیس نے بتایا کہ طالبات کو یہ سزا 23 نومبر کو دی گئی تاہم یہ معاملہ 27 نومبر کو تب منظر عام پر آیا جب متاثرہ طالبات نے ایک طلبا تنظیم سے رجوع کیا۔ طلبا تنظیم نے بعد ازاں اس معاملے کی شکایت مقامی پولیس اسٹیشن میں درج کروائی۔ مقدمے کے مطابق دو اسسٹنٹ ٹیچر اور ایک جونئیر ٹیچر نے ہیڈ ٹیچر اور ایک لڑکی سے متعلق نازیبا الفاظ پر مشتمل ایک کاغذ برآمد کیا، جس کے بعد 88 طالبات کو سزا دینے کے لیے زبردستی ان کے کپڑے اُتروادئے، مقامی پولیس سپریٹنڈنٹ نے اس مقدمے کی تصدیق کی ۔ان کا کہنا تھا کہ اس کیس کو خواتین کے پولیس اسٹیشن بھجوا دیا گیا ہے۔ خاتون پولیس افسر نے کہا کہ مقدمہ درج کرنے سے قبل متاثرہ طالبات، ان کے والدین اور اساتذہ سے تفتیش کی جائے گی۔ آروناچل پردیش کانگریس کمیٹی نے طالبات کو اس طرح کی سزا دینے کی شدید مذمت کی۔

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  وہ اوقات جب پانی “ نہ “ پینا صحت کیلئے فائدہ مند ثابت ہوتا ہے ۔۔۔ پڑھیے ایک معلوماتی تحریر