اس 44سالہ پاکستانی کو فحش فلموں میں کام کرنے اور کروڑوں روپے کی پیشکش ہو گئی۔۔اس میں ایسی کیا خاص بات ہے؟؟حیران کن رپورٹ جاری

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) فحش فلموں کے قبیح مناظر کی عکسبندی سے قبل ان میںکام کرنےوالے مردو خواتین کی جسمانی بناوٹ کو خاص اہمیت حاصل ہوتی ہے۔ اس شیطانی کام کی خاطر جسموں کی بناو ٹ کےلئے ایسے مردو خواتین کو خاص مشقت سے بھی گزرنا پڑتا ہے۔ اورا سی بنا پر انھیں پر کشش معاوضہ دیا جاتا ہے۔تاہم اب یہ پیشکش برطانیہ میں مقیم

مزید پڑھیں  یہ کام میری موت سے پہلے نہیں ہو سکتا۔۔۔۔ سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا امریکی ٹی وی چینل کو دھماکہ دار انٹرویو، اسامہ بن لادن کے حوالے سے بھی تہلکہ خیز انکشافات - urdu tv online

پاکستانی کوبھی کر دی گئی ہے۔ پاکستانی نژاد برطانوی شہری 44سالہ محمد عابد ایک سڑک پر چلتے ہوئے کار سے ٹکرا گئے تھے اور کار انھیں سڑک پر گھسیٹتی ہوئی لے گئی تھی جس کے بعد ان کی جان تو بچ گئی لیکن انھیں اپنے مردانہ عضو سے محروم ہونا پڑ گیا تھا۔محمد عابد نے اس معذوری کو گلےمیں لٹکائے رکھنے کی بجائے مصنوعی عضو کی پیوند کاری کا فیصلہ کیا جس کے لئے انھیں آپریشن کی مد میں 70ہزار پاؤنڈ (تقریباً 1کروڑ 5لاکھ روپے)خرچ کرنا پڑ گئے تھے۔ اب وہ اس مصنوعی عضو کے ساتھ صحت مند زندگی گزار رہے ہیں لیکن اس کے بعد فحش فلموں کے پروڈیوسرز نے ان کے ساتھ رابطے کرکے انھیں ایسی فلموں میں کام کرنے کی پیشکش کردی ہے اور اس کے بدلے وہ کروڑوں روپے بھی آفر کر رہے ہیں۔ لیکن محمد عابد نے ایسی فلموں میں کام کرنے سے صاف انکار کر دیا ہے۔

مزید پڑھیں  پرویز مشرف جنرل نہیں سیاست دان ہیں،وطن واپس آئیں سکیورٹی دینگے،حکومت کا اعلان

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments