انسانی سمگلروں نے نوکری کا جھانسہ دے کر 2 سگی بہنیں سعودی عرب میں جسم فروشی کے اڈے پر فروخت کردیں

نواحی علاقہ میں خواتین کو بیرون ملک فروخت کرکے ”دھندہ“ کرنے والے انسانی سمگلر گروہ کا انکشاف ہوا ہے مذکورہ گروہ نے نوکری کا جھانسہ دے کر دو سگی بہنوں کو سعودی عرب لے جاکر جسم فروشی کے اڈے پر فروخت کردیا۔ مغوی خواتین کی والدہ انصاف کے لئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہوگئی۔

میری بیٹیوں نے انتہائی مشکل سے ہمیں فون کرکے بتایا کہ مذکورہ ملزمان نے ہمیں فروخت کردیا ہے اور یہ گروہ ہم سے جسم فروشی کا دھندہ کرواتا ہے۔ ہم سے بیس بیس گھنٹے کام لیا جاتا ہے اور کھانے میں صبح و شام تھوڑے سے ابلے ہوئے چاول اور دال دی جاتی ہے۔ کام سے انکار کرنے والے کو ننگی تاروں سے تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے اور ہمیں قتل کرنے کی دھمکیاں دی جاتی ہیں۔ شمیم بی بی کے مطابق دونوں خواتین کے چار، چار بچے ہیں جو ماﺅں کے نہ ہونے کی وجہ سے بیماری میں مبتلا ہوگئے ہیں۔ میں نے 312 گ ب میں فاروق وغیرہ سے رابطہ کرکے بیٹیوں بارے بات کی تو انہوں نے ہمیں دھمکیاں دیں کہ ہم نے آپ کی بیٹیوں کو بیرون ملک بھجوادیا ہے اور اب ہمارا کوئی تعلق نہ ہے۔ اگر ہم سے دوبارہ پوچھا تو تم سب کو جھوٹے مقدمات میں پھنسا دیں گے اور اگر تم اپنی بیٹیوں کو زندہ واپس چاہتے ہو تو ہمیں چار لاکھ روپے ادا کرو۔ شمیم بی بی نے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ملزمان کے خلاف کارروائی کی جائے۔ ایف آئی اے حکام کے مطابق انسانی سمگلر میں ملوث گروہ کے 6ملزمان میں سے دو کو گرفتار کرلیا گای باقی کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  فلسطینیوں کا قتل عام۔۔ترکی نے عالم اسلام کی رہنمائی کا حق ادا کر دیا شیر اسلام ترک صدر طیب اردوان کے حکم پر اسرائیلی سفیر کے بعد ایسی یہودی شخصیت کو ملک چھوڑنے کا کہہ دیا گیا کہ اسرائیل دانت پیس کر رہ گیا