ایسا واقعیا کے اپ کا دل بھر آے گا …. واہ مولانا صاحب

یہ ٹیلی فلموں اور ڈراموں میں زیادہ تر سیکولرازم اور لیڈیز فرسٹ والے عقیدوں اور فلسفوں کو اجاگر کیا جارہا ہے یہاں تک کہ گرل فرینڈ بوائے فرینڈ کے بھی تزکرے کھلم کھلاّ ہونے لگے ہیں اور کالج یونیورسٹی اور سکول اور جاب کے دوران آفس میں ملنا ملانا بھی اب کثرت سے دکھایا جاتا ہے اور یہ دکھایا جاتا ہے کہ لڑکا لڑکی کو چائے کے لیے لے جاتا ہے اور بات شروع ہوجاتی ہے فرینڈ شپ کی لڑکا کہتا ہے کہ کسی دن کسی پارک میں ملتے ہیں گھومیں گے پھریں گے جی بھر کے مزے مزے کی باتیں کریں گے ایک دوسرے سے دکھ سکھ کریں گے اور بات آگے بڑھتی ہے لڑکا کہتا ہے کہ اب ہم فرینڈ ہیں کسی دن ہوٹل میں چلتے ہیں وہاں اکٹّھے کھانا کھائیں گے اور بات آگے بڑھتی ہے لڑکا کہتا ہے کہ سینما میں چلتے ہیں اچھی سی فلم دیکھیں گے اور بات آگے بڑھتی ہے تو ایک دن ایسا آتا ہے کہ غیر محرم لڑکا لڑکی ہوٹل میں حالت غیر میں پکڑے جاتے ہیں اور یا لڑکی کو حمل ہوجاتا ہے تو پتا چلتا ہے کہ کیا گل کھلائے جارہے ہیں اور ایسا کثرت سے ہوتا ہے

مزید پڑھیں  Surah Al Kahf Ki Rohani Barkat (گھر برکت سے مالا م...

اب میں تو یہاں یہ بات اجاگر کرنا چاہوں گا اور ایک المیہ کی طرف حکمرانوں اور دانشوروں کی توجہّ دلانا چاہوں گا کہ اب تو حمل کا ہو جانا اور کنواری حاملہ ہو جانا کوئی مسئلہ ہی نہیں سمجھا جاتا کہ تھوڑے سے پیسے خرچ کریں گے اور ابارشن کروا لیں گے لیکن جو جوان بیٹیوں کی عزّت پیچ بیچ کر راتوں رات امیر بننے کے خواب دیکھے جاتے ہیں اور جو پہلے سے پیسے والے ہوتے ہیں وہ یہ کہہ کر اتنا بڑا گناہ اپنے سر ڈال لیتے ہیں کہ بچّوں کو ایسی پیار محبّت کی باتوں سے منع نہیں کرنا چاہیے جیسے کھانا کھا لیا پانی پی لیا ایسے ہی سیکس کر لیا اور اس فن میں مہارت حاصل کرکے بچّے کمائی کریں بلیو فلمیں بنا کر اپ لوڈ کریں گے اور دنیا پر حکومت کریں گے جس شعبہ میں چاہیں گے افسر بن جائیں گے اور ترقّی کی راہوں پر چل پڑیں گے اور اس طرح جرائم اور کرپشن کی راہ پر اولاد کو ڈال دیا جاتا ہے

مزید پڑھیں  Masjid e Aqsa | ki tameer ka waqia | Al ...

اور جو لوگ اس قسم کے جرائم کو روکنے کی بات کرتے ہیں اور لوگوں میں اس بات کا پرچار کرتے ہیں کہ حکومت کو ان جرائم پر قابو پانا چاہیے اور جو لوگ یہ کام کرتے ہیں ان کو اسلام کے مطابق سزائیں دی جانی چاہیئیں اور سر عام ڈنڈے مارنے چاہئیں تو یہ حق بات کا پرچار کرنے پر ایسے لوگوں کو دہشت گرد قرار دے کر ان کا جینا محال کر دیا جاتا ہے

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments