حکومت نے فیض آباد دھرنا قائدین کے مذاکرات مان پر بہت بڑی غلطی کر دی ہے

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سیاسی تجزیہ کار مبشر زیدی نے کہا کہ ریاست نے فیض آباد دھرنا قائدین کے مطالبات تسلیم کر کے بہت بڑی غلطی کردی ہے . انہوں نے کہا کہ حکومت دھرنا مظاہرین کے سامنے لیٹ گئی ہے .

اس کا اثر یہ ہو اہے کہ لاہور میں تحریک لبیک کا جو دھرنا بیٹھا ہوا ہے اس نے اپنے مطالبات کو آگے بڑھا دیا ہے اور دھرنا ختم کرکے اُٹھنے سے بھی انکار کر دیا ہے.

مزید پڑھیں  سانحہ ماڈل ٹاؤن میں طاقت کا بے جا استعمال کیا گیا ،رانا ثنا اللہ کا اعتراف

ان کا ماننا ہے کہ حکومت پر ذرا سا بھی پریشر ڈالا جائے تو حکومت مطالبات قبول کر لے گی . لاہور میں بیٹھے ہوئے اشرف آصف جلالی فرما رہے ہیں کہ ہم فیض آباد کے دھرنا قائدین سے حکومت کے کیےگئے معاہدے سے لا تعلقی کا اعلان کرتے ہیں کیونکہ میں تحریک لبیک کا چئیرمین ہوں. انہوں نے کہا کہ ہے زاہد حامد کے لیے استعفے کی سزا کافی نہیں ہے ان کو تا عمر سیاست کے لیے نا اہل قرار دیا جائے .

مزید پڑھیں  Sheikh Rasheed bhi medan main

یہی ہوتا ہے جب حکومت کسی ایک گروہ کی بات تسلیم کرتی ہے. کیونکہ ان لوگوں کی سوچ یہی بن جاتی ہے کہ حکومت پر جتنا دباؤ ڈال سکتے ہیں ڈال لیں اور ریاست تمام مطالبات مان لے گی . ایسا لگ رہا ہے کہ حکومت نے مظاہرین کے سامنے گھٹنے ٹیک دئے ہیں. یہ دو چار ہزار لوگ جو دعویٰ کرتے ہیں کہ وہ ملک بھر کی عوام کے نمائندہ ہیں کہیں بھی جا کر کوئی بھی سڑک بلاک کرتے ہیں اور حکومت کو مجبور کر دیتے ہیں. حکومت کی اس نالائقی کی وجہ سے لاہور میں موجود دھرنا مظاہرین کے مطالبات میں ابھی مزید اضافہ ہو گا. مبشر زیدی کا مزید کیا کہنا تھا آپ بھی دیکھیں:

مزید پڑھیں  نقیب اللہ محسود کی نماز جنازہ کس اہم شخصیت نے پڑھائی ۔۔۔جانئے

..

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments