خادم رضوی،افضل قادری کیخلاف مقدمہ درج

پنجاب کانسٹیبلری کے 3کانسٹیبلوں کواغوا کرکے تشددکانشانہ بنانے کے الزام میں خادم حسین رضوی،افضل قادری اوران کے ساتھیوں کے خلاف مقدمہ درج کرلیاگیا۔تھانہ نیوٹاﺅن کوانسپکٹر ندیم عباس خان پی سی روات نے بتایاکہ 25نومبرکو میری ریزروکی ڈیوٹی فیض آباد لگا ئی گئی ملازمین کو مختلف مقاما ت پرتعینات کیاگیا جس میں کانسٹیبلز غلام سفیر، فرحان ظفر، اورحضور اکرم کی ڈیوٹی میٹروسٹیشن کے قریب لگا ئی گئی تھی،دن ساڑھے تین بجے مظاہرین میٹرو سٹیشن کاجنگلا توڑ کر داخل ہوئے انہیں بمشکل پیچھے کیاگیا،اسی دوران نفری چیک کی تو تین کا نسٹیبل لاپتہ پائے اب کانسٹیبل فرحان ظفر نے حاضر ہوکر بتایاکہ اڑھائی،تین سو مظاہرین نے مجھ پراور غلام سفیر اورحضور اکرم پر تشدد کیا اور اغوا ءکرکے اپنے امیرافضل قادری کے سامنے پیش کیا،ہم سے ٹیئرگیس گن شیل کے ڈبے،اینٹی رائٹ پرس اور مو بائیل بھی چھین لئے، ہم زخمی حالت میں بمشکل وہاں سے بھاگے اور پمز ہسپتال پہنچے،مظاہرین نےافضل قادری اور مولا نا خادم حسین رضوی کے اکسانے پرہم پر تشدد کیا،کارسرکار میں مداخلت کر تے ہوئے سامان چھین لیااور حبس بے جامیں رکھا۔

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  ثانیہ مرزا شوہر شعیب ملک کے ہمراہ سیالکوٹ پہنچ گئیں