سعودی حکومت نے غیر ملکی ملازمین کے ساتھ کیا کام شروع کر دیا جان کر حیران رہ جائیں گے

urdu tv onlineریاض (نیوز ڈیسک) سعودی عرب میں غیر ملکیوں کے اہلخانہ پر لگنے والے ماہانہ ٹیکس نے ان کیلئے مملکت میں قیام ایسا مشکل بنا دیا ہے کہ بڑی تعداد سعودی عرب کو چھوڑ کر جانے پر مجبور ہو گئی ہے۔ سعودی گزٹ کے مطابق سعودی جنرل اتھارٹی فار سٹیسٹکس نے حال ہی میں ایک رپورٹ شائع کی ہے جس کے مطابق سال رواں کی دوسری سہ ماہی کے اختتام تک 62 ہزار غیر ملکی سعودی عرب کو چھوڑ کر جا چکے ہیں ۔اس فیس کا نفاذ رواں سال جولائی سے کیا گیا تھا۔ ابتدائی طور پر غیر ملکیوں کے اہل خانہ پر 100 ریال فی کس ماہانہ فیس عائد کی گئی ہے ۔ اگلے سال یہ فیس 200 ریال ماہانہ ، 2019 میں 300 ریال ماہانہ اور 2020 میں 400 ریال ماہانہ ہو جائے گی ۔ سعودی حکومت نے 2030 تک غیر ملکیوں کی تعداد میں نمایاں کمی کر کے ان کی جگہ سعودی شہریوں کو ملازمت دینے کا ہدف مقرر کر رکھا ہے ۔ اس حکمت عملی کے تحت 2020 تک سعودی شہریوں کی بیروزگاری کی شرح 9 فیصد سے کم جبکہ 2030 تک اسے 7 فیصد تک لایا جائے گا ۔ حکام کا کہنا ہے کہ اس وقت غیر ملکیوں کے پاس موجود 12 لاکھ سے زائد ملازمتیں 2020 تک سعودی شہریوں کے حوالے کر دی جائیں گی۔

دوستوں سے شئیر کریں
مزید پڑھیں  الیکشن میں 9 روز باقی ۔۔۔۔۔ تحریک انصاف نے بھر پور طاقت آزمانے کافیصلہ کر لیا