سعودی خاتون نے عمر قید کے مجرم سے جیل میں شادی کرلی لیکن پھر ایسا کام ہوگیا جو کبھی خوابوں میں بھی نہ سوچ سکتی تھی، سعودی حکومت نے اسے۔۔۔

جدہ(مانیٹرنگ ڈیسک) شادی کرنے کے لئے لوگ کسی شریف النفس شخص کی تلاش کرتے ہیں اور اس معاملے میں سو طرح کے تردد کرتے ہیں لیکن سعودی عرب میں ایک خاتون نے عجب فیصلہ کیا کہ بینک ڈکیتی کے جرم میں عمر قید کی سزا کاٹنے والے شخص سے شادی کر لی۔

شاید آپ بھی کہیں گے کہ اس فیصلے کا کوئی اچھا نتیجہ نہیں ہو سکتا تھا، لیکن انجام اتنا برا ہوگا، یہ تو کوئی بھی نہیں سوچ سکتا تھا۔ اس خاتون کی بدقسمتی دیکھئے کہ جب شادی کی تو خاوند عمر قید کی سزا کاٹ رہا تھا لیکن اب اس کی سزا تبدیل کر کے سزائے موت کر دی گئی ہے۔

سعودی گزٹ کے مطابق ظاہور نامی خاتون نے جمیل نامی قیدی سے 2007 میں جیل میں ہی شادی کی تھی۔ گزشتہ دس سال کے دوران دونوں میاں بیوی جیل میں ہی ملاقات کرتے رہے ہیں اور اس تمام عرصے کے دوران ان کے ہاں ایک بیٹا اور بیٹی بھی پیدا ہو چکے ہیں۔ ہائی سکیورٹی بریمان جیل میں قید جمیل کے خلاف استغاثہ نے جدہ ہائیکورٹ میں اپیل کی تھی، جو منظور ہوئی اور بالآخر اس کی عمر قید کو سزائے موت میں بدل دیا گیا۔

مزید پڑھیں  ”ہم اپنے ایٹمی ہتھیارضائع کرنے کیلئے تیار ہیں “ امریکہ کے دشمن نمبر ایک ایٹمی ملک نے ناقابل یقین اعلان کر دیا

اب صورتحال یہ ہے کہ کسی بھی وقت جمیل کی سزائے موت پر عمل درآمد ہو سکتا ہے۔ بدقسمت خاتون کا کہنا ہے کہ وہ اور اس کے بچے حکام اعلٰی سے اپیل کرتے ہیں کہ ان پر رحم کیا جائے اور جمیل کو معاف کر دیا جائے ورنہ وہ سب جیتے جی مر جائیں گے۔ اس کی دردمندانہ اپیل کا کیا جواب ملے گا، معافی یا سزائے موت، کوئی نہیں جانتا۔

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments