سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں داد رسی کیلئے آئے ایک فریادی کا چیف جسٹس سے معصومانہ سوال ، جواب میں جسٹس ثاقب نثار نے کیا کہا؟ خبر آگئی

لاہور (ویب ڈیسک) سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں اپنی داد رسی کیلئے آئے ایک فریادی نے چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار سے دوران سماعت معصومانہ سوال کیا کہ کیا آپ ہمیشہ کے لئے چیف جسٹس رہ سکتے ہیں؟ چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بنچ


نے ہفتہ کے روز مفادعامہ سے متعلق مختلف مقدمات کے ازخود نوٹسز کی سماعت کی۔ا س دوران سائلین کی بڑی تعداد اپنی فریادیں لئے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری کے باہر صبح سے ہی اکٹھی ہوگئی تھی۔ سائلین نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری کے باہر احتجاج کئے اور چیف جسٹس آف پاکستان سے اپنے اپنے معاملے پر از خود نوٹسز لینے کی فریاد کی۔ سپریم کورٹ میں اہم مقدمات کی سماعت کے بعد چیف جسٹس نے سپریم کورٹ کے باہر کھڑے سائلین کو عدالت کے کمراہ نمبر 1 میں بلایا اور ایک ایک کرکے سب کی فریاد سنی۔ اس دوران ایک سائل نے چیف جسٹس سے معصومانہ سوال کیا کہ ”چیف جسٹس صاحب! کیا آپ ہمیشہ کےلئے چیف جسٹس رہ سکتے ہیں؟ جس پر چیف جسٹس نے مسکراتے ہوئے جواب دیا، ”نہیں، میں ہمیشہ کے لئے چیف جسٹس نہیں رہ سکتا۔“ سائل نے پھر سوال کیا کہ ”کیا آپ کے بعد آنے والے جج صاحبان بھی ایسے ہی لوگوں کے بنیادی حقوق کے لئے اقدامات کریں گے؟“ جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ انہیں اپنے ججز پر یقین ہے اور وہ پرامید ہیں کہ ان کے بعد آنے والے ججز ایسے ہی لوگوں کے بنیادی حقوق کا خیال رکھیں گے۔ انہوں نے سائل سے کہا کہ آپ بس دعاکریں کہ میں اپنی ذمہ داری بخوبی ادا کرکے سپریم کورٹ سے سرخرو ہوجاﺅں جس پر روسٹرم پر کھڑے تمام سائلین نے چیف جسٹس کی صحت، تندرستی اورلمبی زندگی کے لئے دعا کی۔(ف۔م)

مزید پڑھیں  نوازشریف کے بعد عمران خان پر جوتے کاحملہ کرنے کی کوشش کرنے والا پکڑا گیا،کس نے بھیجاتھا؟ کلمہ پڑھ کربڑی سیاسی جماعت کے اہم ترین رہنما کا نام لے لیا، حیرت انگیزانکشافات


دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments