سی ویو فائرنگ کے واقعے سے متعلق نیا انکشاف ، مقصد مرسڈیز کو روکنا تھا، گولیاں گاڑی میں بیٹھے افراد کو لگ گئیں:ملزم خاور برنی

کراچی سی ویو پر موٹرسائیکل ریسنگ کے دوران فائرنگ کے واقعے سے متعلق نیا انکشاف سامنے آیا ہے ۔فائرنگ کرنے والے ملزم خاور برنی نے پولیس کو دیئے گئے بیان میں موقف اپنا یا ہے کہ اس نے فائرنگ انتہائی غصے کے عالم میں کی تھی۔اس کا مقصد مرسڈیز کو روکنا تھا لیکن غلطی سے گولیاں گاڑی میں بیٹھے افراد کو لگ گئیں ۔ملزم خاور کا مزید کہنا ہے کہ وہ بائیک سے گزرنے والے ڈاکٹر رحیم اور مقتول کو جانتا تک نہیں ہے ۔اس نے گاڑی روکنے کی کوشش کی اور نہ رکنے پر فائرنگ کی۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز سی ویو پر موٹر سائیکل ریس کے دوران ایک مرسڈیز کی ٹکر سے موٹرسائیکل سوار ڈاکٹر رحیم گر گئے تھے ۔جس کے بعد مرسڈیز وہاں سے نکل گئی تھی ۔لیکن ملزمان نے موٹرسائیکل اور ڈبل کیبن پک اپ پر مرسڈیز کاپیچھا کیا۔اور ایک جگہ پہنچ کر ملزم خاور برنی نے مرسڈیز پر فائرنگ کردی تھی ۔جس سے گاڑی کے اندر بیٹھے ہوئے 26سالہ ظافر فہیم موقع پر جاں بحق جبکہ زید زخمی ہوگیا تھا۔مقدمے کے تفتیشی افسر کا کہنا ہے کہ مقتول ظافر کو 2 گولیاں لگیں، جو اس کی موت کا سبب بنیں۔تفتیشی افسر کا مزید کہنا تھا کہ جس گاڑی میں ظافر سوار تھا، اس پر دائیں جانب سے فائرنگ کی گئی، ظافر کو سینے اور ہاتھ پر گولیاں لگیں، جس سے اس کی موت واقع ہوئی۔

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  لودھراں کا انتخاب ہارنے کے بعد پی ٹی آئی کے اپنے ہی رہنما علی ترین کو ٹکٹ دینے کے فیصلے کے خلاف نظر آتے ہیں