شہباز شریف کا سعودی عرب جانے کا صرف اور صرف یہ مقصد تھا۔۔۔شیخ رشید نےاہم اعلان کردیا

اسلام آباد (نیوزڈیسک) عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ ساری عرب دنیا مل کر بھی این آر او نہیں کراسکتی، شریف برادران کل 2 بجے سے ریاض میں بیٹھے ہوئے ہیں لیکن شاہ سلمان کی طرف سے ان کی بار آوری کی درخواست قبول نہیں کی گئی۔سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ پانچ ججوں نے جس شخص کو نا اہل قرار دیا وہ پارٹی پالیسی بنانے کی طاقت پر براجمان ہوگیا ہے، ایک وقت آئے گا جب کرپٹ افراد کو کوئی بھی قبول نہیں کرے گا اور انہیں اپنے ہی ملک کی جیلوں میں ڈالا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ ان کی صبح9 بج کر 45 منٹ پر ریاض میں بات ہوئی ہے ، اور ان کی اطلاعات کے مطابق شریف برادران کل 2 بجے سے ریاض میں بیٹھے ہوئے ہیں لیکن شاہ سلمان کی جانب سے انہیں اندر جانے کی اجازت نہیں ملی، ان کی بار آوری کی درخواست قبول نہیں ہوئی۔شیخ رشید نے کہا کہ ساری عرب دنیا بھی مل جائے پھر بھی کوئی این آر او نہیں ہوگا اور جو سیاستدان افواہیں پھیلا رہے ہیں ان کی عقل پر ماتم کرنے کو دل کرتا ہے۔ آج آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور چیف جسٹس میاں ثاقب نثار ہے ، مشرف کے دور اور آج میں بہت فرق ہے آج نہ کوئی جنرل بٹ ہے اور نہ ہی ملک قیوم ہے یہاں انصاف ہوگا اور اصولوں پر مبنی ہوگا۔عوامی تحریک کی اے پی سی کی کامیابی کے حوالے سے پوچھے گئے سوال پر شیخ رشید احمد نے کہا کہ اے پی سی کے دوران لطیف کھوسہ نے ان سے وعدہ کیا ہے کہ وہ حدیبیہ اور ایل این جی کیس مفت لڑیں گے اس لیے میری اے پی سی کامیاب ہوگئی ہے باقیوں کا پتہ نہیں ہے
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  نگران وزیرا عظم کے انتخاب کا قانونی طریقہ کار کیا ہے ؟ پڑھیے ایک معلوماتی رپورٹ