طاہر القادری اور تحریک انصاف کی راہیں جدا ہونے کی اصل وجہ کیا ہے؟ ناقابل یقین خبر آ گئی

اسلام آباد (ویب ڈیسک )تحریک انصاف کے رہنما فواد چودھری نے کہا کہ طاہر القادری آئین سے باہر کی سوچتے ہیں جبکہ ہم آئین کو مانتے ہیں ۔ ہماری اور طاہر القادری کی سوچ میں فرق ہے ۔عوامی تحریک کے سربراہ طاہر القادری کی پریس کانفرنس کے حوالے سے نجی ٹی وی”

سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چودھری نے کہا ہے کہ ہم آئین کو مانتے ہیں جبکہ طاہر القادری کہتے ہیں کہ موجودہ نظام درست نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہماری اور طاہر القادری کی سوچ میں فرق ہے ۔ طاہر القادری آئین سے باہر کی چیزیں سوچتے ہیں۔فواد چودھری کا کہنا تھا کہ انتخابات میں بنیادی چیز علاقے کے مسائل کو مدنظر رکھنا ہے ۔ انہوں نے کہا الیکٹیبلز صرف تحریک انصا ف میں ہی نہیں آئے بلکہ دوسر ی پارٹیوں میں بھی گئے ہیں۔واضح رہے کہ عوامی تحریک نے انتخابات میں حصہ نہ لینے کا اعلان کر دیا۔ ڈاکٹر طاہرالقادری کا کہنا ہے کہ جو کچھ ہو رہا ہے، یہ جمہوریت نہیں، نظام کو بدلنے کیلئے نظام کا حصہ ہونا ضروری نہیں۔عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے لاہور میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ یہ نظام دھاندلی زدہ اور ظلم زدہ ہے اور کرپٹ کو تحفظ دیتا ہے جبکہ پی اے ٹی والے کچلنے والے نظام کا حصہ نہ تھے نہ ہیں اور نہ رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے انتخابات پر یقین رکھتے ہیں جس میں آئین بالادست ہو۔ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ الیکشن میں حصہ لینا ہماری جدوجہد کی موت ہے، ہماری جدوجہد جاری رہے گی، ٹکٹ جاری نہیں کریں گے اور امیدواروں کے جمع کرائے گئے کاغذات واپس لیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کرپٹ انتخابی نظام کی اصلاح کیلئے 2013 میں جدوجہد شروع کی، ہماری جنگ صرف نظام کی تبدیلی اور اصلاحات کی تھی۔ طاہرالقادری کا کہنا تھا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کا آج تک انصاف نہیں ملا، اصولوں کی جنگ جاری رکھیں گے۔(ع،ع)

مزید پڑھیں  ماہرہ خا ن نے یو کے ایشین فلم فیسٹیول ایوارڈبیٹے کے نام کردیا

دوستوں سے شئیر کریں