عمران خان نا اہلی کیس :سپریم کورٹ نے رقم منتقلی سے متعلق عمران خان سے ٹھوس شواہد مانگ لیے

عمران خان نا اہلی کیس :سپریم کورٹ نے رقم منتقلی سے متعلق عمران خان سے ٹھوس شواہد مانگ لیے

اسلام آباد (ڈیسک ):سپریم کورٹ میں چیئر مین پی ٹی آئی عمران خان کی نا اہلی سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے رقم منتقلی سے متعلق  عمران خان سے ٹھوس شواہد مانگ لیے۔

 عمران خان نا اہلی کیس کی سماعت چیف جسٹس آف پاکستان  جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں3 رکنی بینچ نے (ن ) لیگ کے رہنما حنیف عباسی کی درخواست پر کی ۔

 پی ٹی آئی چیئر مین کے وکیل نعیم بخاری نے عدالت میں  دلائل دیتے ہوئے کہا کہ  گزشتہ سماعت پر عدالت نے 2 سوالات اٹھائے تھے ایک سوال بینک میں موجود 75 ہزار پاؤنڈ ڈالر کو ظاہر کرنے سے متعلق تھا  اور عدالت نے ظاہر کرنے یا نہ کرنے کے نتائج پر بھی سوال اٹھایا تھا  انہوں نے کہا ایف بی آر کو جمع کروائی گئی  اسٹیٹمنٹ سے الیکشن کمیشن کا تعلق نہیں ،اکاؤنٹس میں رقوم کا معاملہ ایف بی آر کا معاملہ تھا ،نعیم بخاری اپنے دلائل میں کہا  کہ جمائما کے اکاؤنٹ میں رقم کی منتقلی کا اندازہ عمران خان کے دو خطوط سے ہوتا ہے اور یہ خطوط 11 اور 18 اپریل 2003کو لکھے گئے تھے نعیم بخاری کے ان دلائل پر چیف جسٹس  نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ٹھوس ثبوت دیں پرچیاں نہ دیں ہم نے ٹرانز یکشنز  کا ریکارڈ مانگا ہے خطوط نہیں چیف جسٹس نے نعیم بخاری سے سوال کیا کہ نیازی سروسز لمیٹیڈ  اکاؤنٹ سے جمائما  کے اکاؤنٹ میں رقم کی منتقلی کی دستاویز کہاں ہیں ؟نعیم بخاری نے کہا نیاز ی سروس سے متعلق تفصیلی جواب دوں گا  جس پر چیف جسٹس نے کہا بد قسمتی سے آپ  تسلی بخش جواب نہیں دے پا رہے  جبکہ  جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیے کہ یہ ٹیکس یا اکاوٴنٹنگ کی کارروائی نہیں،عمران خان عوامی عہدے پر ہیں اگرچہ عوامی فنڈ ان کے پاس نہیں، ہم صرف جائیداد کی رقم کے ذرائع کا جائزہ لے رہے ہیں، یہ عوامی فنڈز کے استعمال کا کیس نہیں۔جبکہ چیف جسٹس نے کہا رقوم منتقلی سے متعلق شواہد پیش کرنے کی ذمے داری عمران خان کی ہے جس پر عمران خان کے وکیل نے کہا کہ دستاویزی ثبوت کے لئے جمائما کو ای میل کی ہے اور انہوں نے بینک تفصیلات تلاش کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے جب کہ جمائما نے 75 ہزار پاؤنڈ کی وصولی بھی کنفرم کی ہے۔

مزید پڑھیں  عدالت نے نہال ہاشمی سے ایک اور چیز مانگ لی

عدالت نے نعیم بخاری کے دلائل سننے کے بعد سماعت 18 اکتوبر تک ملتوی کردی ۔

دوستوں سے شئیر کریں