عمر ڈار کونواز شریف کی تصاویر سوشل میڈیا پر لگانی مہنگی پڑ گئی۔۔۔بڑی مشکل میںپھنس گئے

لاہور ( نیوزڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے رہنماءعمر ڈار کو سابق وزیر اعظم نواز شریف کی ایڈیٹ شدہ تصویر سوشل میڈیا پر شیئر کرنے پر وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے ) نے طلب کر کے ان سے تصویر کے حوالے سے وضاحت طلب کی ہے ،جبکہ پی ٹی آئی رہنماءنے ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے انہیں سیاسی انتقام قرار دیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی تحقیقاتی ادارے نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی شاہ سلمان کو بوسہ دیتے ہوئے ایڈیٹ شدہ تصویر شیئر کرنے پر تحریک انصاف کے رہنماءعمر ڈار کو طلب کیا۔ اصل تصویر میں نواز شریف اپنی والدہ کے ہاتھ چوم رہے ہیں جبکہ ایڈیٹ شدہ تصویر میں انہیں شاہ سلمان کے ہاتھوں کو بوسا دیتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ اس تصویر کے منظر عام پر آنے کے بعد ایف آئی اے حرکت میں آگئی اور پی ٹی آئی رہنماءکو نوٹس بھیج کر طلب کیا۔ وفاقی تحقیقاتی ادارے کی طلبی پر آج عمر ڈار ایف آئی اے لاہور میں پیش ہوئے اور اپنا بیان ریکارڈ کرایا ۔ بیان ریکارڈ کرانے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمر ڈار کا کہنا تھا کہ انہیں کسی ایسی تصویر کے بارے میں علم نہیں ہے، سوشل میڈیا ٹیم کو اس بارے میں علم ہو سکتا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ میرے کیس میں مدعی خود ایک ادارہ بن گیا ہے ، ایک نا اہل شخص کی تصویر پر بھونڈی تحقیقات کی جارہی ہیں۔ مجھے اپوزیشن جماعتوں کے احتجاج اور خواجہ آصف کے خلاف مدعی بننے پر انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ خواجہ آصف جتنے اوچھے ہتھکنڈے اختیار کر لیں ، انہیں نا اہل کرا کر چھوڑیں گے۔
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  فوج اپنا کردار ادا نہ کرتی تو نہ جانے کتنی لاشیں گرتیں، وزراءبھی عدلیہ کی عزت کرنا سیکھیں