عورت کی زندگی بھی ایک حساب سے کم نہیں۔۔۔شادی سے انکار اور لڑکی کے ساتھ ایسا واقعہ کہ

urdu tv onlineنئی دہلی(نیوزڈیسک) بھارتی ریاست حیدرآباد میں پولیس نے اس شخص کو گرفتار کر لیا ہے جس نے ‘تکرار’ کے بعد ایک لڑکی پر تیل چھڑک کر آگ لگا دی جس سے وہ جل کر ہلاک ہوگئی۔ پولیس نے بی بی سی کو بتایا کہ پچیس سالہ سندھیا رانی ریسپشنسٹ تھیں اور دفتر سے گھر واپس جا رہی تھیں کہ شام چھ بجے کے قریب اس پر حملہ کیا گیا۔ جلتی لڑکی کو دیکھ کر لوگ اس کی مدد کو بھاگے اور اسے ہسپتال پہنچانے کا انتظام کیا لیکن سندھیا راستے ہی میں دم توڑ گئی۔ اطلاعات کے مطابق لڑکی کو زندہ جلانے والا اٹھائیس سالہ ملزم ماضی میں سندھیا کے دفتر میں کام کیا کرتا تھا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ جب ملزم لڑکی کے پاس پہنچا تو دونوں میں کسی بات پر تکرار ہوگئی جس کے بعد ملزم نے مٹی کے تیل کا کنستر لڑکی پر انڈیل دیا اور پھر آگ لگا دی۔پولیس کے مطابق اس طرح کے الزام ہیں کہ ملزم سندھیا رانی کو دو سال سے شادی کے لیے مجبور کر رہا تھا لیکن لڑکی نے یہ رشتہ ماننے سے بارہا انکار کیا۔البتہ پولیس کہتی ہے کہ یہ ابھی واضح نہیں کہ ملزم کے خلاف اس معاملے میں کوئی شکایت درج کرائی گئی تھی یا نہیں۔حکومتی اعداد و شمار کے مطابق انڈیا میں ہر برس سینکڑوں خواتین پر تیزاب سے حملہ کیا جاتا ہے۔ ان واقعات کے خلاف آگاہی پیدا کرنے والے کہتے ہیں کہ خواتین اکثر شکاری مردوں یا حاسد پارٹنروں کا نشانہ بنتی ہیں
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  اسرائیلی جنگی طیاروں کا ایران میں داخل ہو کر حملہ ،ایٹمی اثاثے تباہ کر ڈالے