قصور کس کے کہنے پر مظاہرین پر گولیاں چلائی گئیں۔۔۔اہم نام سامنے آگیا

لاہور(نیوزڈیسک )زینب قتل کیس اور 17 جنوری کو لاہور میں دیئے جانیوالے دھرنے کے حوالے سے ایک اعلیٰ سطحی اجلا س ہوا ،جس میں صوبائی وزرا رانا ثنا اللہ، ایوب خان گادھی ،سابق آئی جی پنجاب رانا مقبول، ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ میجر ریٹائرڈ اعظم سلیمان سمیت دیگرافسر شریک ہوئے۔اجلا س میں صوبائی وزیر پولیس پر برس پڑے ، کہنے لگے کہ شہری دہشت گرد نہیں جن پر سیدھی گولیاں برسائی جاتی ہیں، پولیس افسر اپنے اہلکاروں کو حکم دیں کہ کسی صورت بھی شہریوں پر سیدھی گولی مت چلائی جائے ، ڈرانے دھمکانے کیلئے ہوائی فائرنگ بہت ہوتی ہے ، پانی کا استعمال کیا جا سکتا ہے۔اجلا س میں واضح طورپر حکم دیدیاگیا ہے کہ پولیس افسر اہلکاروں کو شہریوں پر گولی چلانے کا حکم نہیں دیں گے ، جبکہ قصور میں فائرنگ کے معاملے پر جو رپورٹس اجلاسوں میں پیش کی گئی ہیں ان میں بتایا گیا ہے کہ ڈپٹی کمشنر سائرہ عمر نے اپنے آفس کے گارڈز کو یہ احکامات دئیے تھے کہ کسی بھی شہری کو دفتر میں داخل نہیں ہونے دینا ، جس کی وجہ سے گارڈز نے احکامات پر عملدرآمد کرتے ہوئے انہیں روکنے کی کوشش کی تو ساتھ گولیاں بھی چلادیں، جس کے بعد حالات خراب ہوگئے۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں یہ بھی طے ہوا کہ عوامی تحریک کے دھرنے میں اگر کوئی غیر معمولی اقدامات ہوئے تو سیدھی فائرنگ کسی صورت نہ کی جائے ، جبکہ گزشتہ روز ہونیوالے اجلاس میں صوبائی وزیر ایوب خان ایک افسر سے سوال کرتے ہوئے غصے میں آگئے کہ زینب کے قاتل کو گرفتار کیوں نہ کیا گیا، پولیس کی کارکردگی پر سوالات اٹھ رہے ہیں،تحقیقات کر کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے ، پولیس کا کام ہے کہ شہریوں کو انصاف فراہم کرنا لیکن وہ کہاں سوئی رہی ، پولیس نے فوری طورپر اقدامات کرنے کے بجائے خاموشی کیوں اختیار کی رکھی ، اس پر تحقیقات ہونی چاہیے۔ جبکہ اجلاس میں سابق آئی جی پنجاب رانا مقبول اس سارے معاملے پر یہ کہتے رہے کہ ہمیں فوری قاتل کو گرفتار کرنا ہے ، اس کے لئے اقدامات کئے جائیں۔اجلاس میں جے آئی ٹی نے زینب قتل کیس میں اب تک ہونیوالی پیش رفت سے آگاہ کیا، جبکہ ایک افسر نے یہ بھی بتایا کہ شہبازشریف کی جانب سے ملزم گرفتار نہ ہونے پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا گیا ہے ، شہبازشریف نے 24گھنٹے کا وقت دیا ،جو مکمل ہو گیا لیکن گرفتاری عمل میں نہ لائی جا سکی ہے ، اس کے لئے ہمیں ہر ممکن اقدامات کرنے چاہئیں۔
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  Shah Mehmood Qureshi Reponse on PMLN Jalsa in Multan