لاہور ہائی کورٹ نے آزاد جموں و کشمیر کے سگریٹ بنانے اور ڈسٹریبیوٹ کرنے والوں کی جانب سے ایف بی آر کے خلاف دائر درخواست خارج کر دی

اسلام آباد(نیوزڈیسک) لاہور ہائی کورٹ نے آزاد جموں و کشمیر کے سگریٹ بنانے اور ڈسٹریبیوٹ کرنے والوں کی جانب سے سگریٹ ضبط کرنے کے خلاف دائر درخواست خارج کر دی ہے۔ ایف بی آر کے ان لینڈ ریوینیو انفورسمنٹ نیٹ ورک کی جانب سے سگریٹ ضبط کیے گئے تھے جس کے خلاف سگریٹ بنانے اور ڈسٹریبیوٹ کرنے والوں کی جانب سے لاہور ہائی کورٹ کے راولپنڈی بنچ میں درخواست دی۔ لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے کہا گیا کہ پاکستان کی ٹیکس اتھارییٹیز کو مکمل اختیار حاصل ہے کہ وہ اپنی حدود میں سگریٹ میں کسی بھی قسم کی غیر قانونی نقل و حرکت کو روکنے کے لیے کاروائی کریں۔ اس فیصلے سے یہ واضح ہو گیا کہ اب آزاد جموں و کشمیر کے وہ سگریٹ بنانے والے کارخانے جو قوانین کی خلاف ورزی کریں گے وہ ٹیکس چوری نہیں کر سکیں گے۔ اور اب پاکستانی اتھاریٹیز باقاعدہ چیک کرنے کے بعد غیر قانونی طور پر آئے سگریٹ ضبط کر لیں گی۔ والٹن ٹوبیکو، نوبل ٹوبیکو اور وطن ٹوبیکو کی جانب سے ایف بی آر کے ان لینڈ ریوینیو انفورسمنٹ نیٹ ورک کی جانب سے سگریٹ ضبط کیے جانے کے خلاف عدالت سے رجوع کر کے موقف اختیار کیا گیاکہ ان لینڈ ریوینیو انفورسمنٹ نیٹ ورک کو اس طرح سگریٹ ضبط کرنے کا اختیار حاصل نہیں ہے۔ جبکہ ان لینڈ ریوینیو انفورسمنٹ نیٹ ورک کی جانب سے یہ موقف اپنایا گیا کہ آزاد کشمیر میں کام کرنے والی سگریٹ فیکٹریاں غیر قانونی سگریٹ فروخت کر رہی ہیں اور جو کہ پاکستان میں تیار ہونے والے قانونی سگریٹ کے مقابلے میں انتہائی کم قیمت ہیں جس کے باعث قومی خزانے کو نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق، آزاد کشمیر میں کام کرنے والی سگریٹ فیکٹریاں غیر قانونی سگریٹس کی تجارت میں ملوث ہیں۔ ان لینڈ ریوینیو انفورسمنٹ نیٹ ورک کی جانب سے قیمتوں کی جانچ کے حوالے سے تحقیقات کروائی گئیں جس میں پتہ چلا کہ آزاد جموں و کشمیر سے فروخت ہونے والے سگریٹس کی قیمت تمام ٹیکسز کی رقم سے بھی کم ہے۔ ان لینڈ ریوینیو انفورسمنٹ نیٹ ورک کی جانب سے آزاد کسمیر کی اتھاریٹیز کے ساتھ رابطہ کیا گیا تا کہ جوائینٹ ایکشن کے ذریعے غیر قانونی سگریٹس کی خریدو فروخت کو روکا جا سکے۔ تا ہم اس حوالے سے آزاد کشمیر کی اتھاریٹیز کی جانب سے کوئی کاروائی عمل میں نہیں لائی گئی ۔ اپریل 2017 سے ان لینڈ ریوینیو انفورسمنٹ نیٹ ورک کی جانب سے غیر قانونی سگریٹس کے ٹرکوں کو پکڑنے کا سلسلہ شروع کیا گیا جس میں انٹیلی جنس اینڈ انویسٹیگیشن ملتان نے ایک ٹرک، آئی اینڈ آئی فیصل آباد کی جانب سے ایک ٹرک، آر ٹی او لاہور 2 کی جانب سے تین ٹرک، آر ٹی او سیالکوٹ سات ٹرک، آر ٹی او گورانوالہ دو ٹرک، اور آر ٹی او راولپنڈی کی جانب سے غیر قانونی سگریٹس سے بھرے ہوئے چھ ٹرک پکڑے گئے۔ تحقیقات سے مزید یہ بھی پتہ چلا کہ ٹرکوں میں موجود انوائسز کے مطابق خریدنے والے افراد جعلی ایڈرسز کے ساتھ ہیں اور ٹیکس دہندہ بھی نہیں ہیں تا کہ پاکستانی اتھاریٹیز کو بے وقوف بنایا جا سکے۔
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  اس 44سالہ پاکستانی کو فحش فلموں میں کام کرنے اور کروڑوں روپے کی پیشکش ہو گئی۔۔اس میں ایسی کیا خاص بات ہے؟؟حیران کن رپورٹ جاری