مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی بربریت کیخلاف ایرانی سپریم لیڈرآیت اللہ خا منہ ای کا سخت ترین ردعمل سامنے آگیا

بغداد (ویب ڈیسک)مقبوضہ کشمیر پر بھارتی مظالم کے خلاف ایرانی سپریم لیڈرآیت اللہ خا منہ ای کا سخت ردعمل سامنے آیا ہے۔آیت اللہ خا منہ ای کا کہنا ہے کہ اُمید ہے کشمیری عوام تشدد کے ذریعے حکومت کرنیوالوں کوپیچھےدھکیل دیں گے،مستقبل قریب میں دشمن کونیچادکھادیں گے۔ تہران میں شب معراج کی تقریب سےخطاب


یہ خبر پڑھیں : شادی سے پہلے یہ کام نہیں نہیں ۔۔۔۔۔۔کچھ روز قبل ایسا کیا واقعہ پیش آگیا کہ اسٹیڈیم میں تماشائیوں کو محظوظ کرنے والی ایک لڑکی کا کنوارا پن اسکے لیے مصیبت بن گیا ؟

یہ خبر پڑھیں : مقبوضہ کشمیر : زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی 8 سالہ آصفہ کے گھر والوں کیخلاف ایسی ہولناک کارروائی جس نے پورے بھارت میں ہلچل مچادی

مزید پڑھیں  اب میری باری۔۔۔۔انتخابی دنگل کے لیےشریف خاندان کے اور فرد نے الیکشن لڑنے کا اعلان کر دیا، یہ شخصیت کون ہے؟ ناقابل یقین خبر آگئی

میں آیت اللہ خا منہ ای نے کہا کہ تحریک حریت اور عزم و استقلال کے نتیجے میں قابضین کا پسپا ہونا قدرت کی نشانی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر، عراق، افغانستان، شام ، فلسطین، میانمار کے عوام اپنی جدوجہد کے نتیجے میں جلد دشمنوں کو پیچھے دھکیل دیں گے۔دوسری جانب خبر کے مطابق ایران کے روحانی پیشوا آیت اللہ سید علی خامنہ ای نے گزشتہ دنوں کشمیر کے مظلوم مسلمانوں کی حمایت میں دو مرتبہ پے درپے گفتگو کی اس کی بازگشت ابھی تک دنیا میں جاری ہےرہی، اگرچہ وہ اس سے قبل بھی کئی مرتبہ کشمیر کے مسلمانوں کی حمایت میں آواز بلند کرچکے ہیں بلکہ وہ خود سرینگر کا 1981میں دورہ بھی کر چکے ہیں لیکن حالیہ دنوں میں ان کی طرف سے کشمیر کے ذکر کو خاص پس منظر میں دیکھا گیا

مزید پڑھیں  پیپلزپارٹی کا سرکردہ رہنماگرفتار۔۔۔کس جرم میں گرفتار کیاگیا جان کہ آپ کےبھی ہوش ا ڑ جائیںگے


عیدالفطر پر تہران میں عید کا خطبہ دیتے ہوئے انومں نے عالم اسلام کے مسائل کا ذکر کیا تھا، اس دوران میں انواں نے امت اسلامی کے مختلف مسائل کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کشمیر کے مظلوم مسلمانوں کی حمایت کی اور ان کے خلاف جاری ظلم و ستم کی مذمت کی۔ انھوں نے کہا کہ امت اسلامیہ کو ان مظلوموں کی حمایت میں کھڑا ہونا چاہیے اور ہمیں اپنے دوستوں اور دشمنوں کو واضح طور پر پہچاننا چاہیے اور ان کے بارے میں ایک واضح موقف بھی اختیار کرنا چاہیے۔ انھوں نے علمائے اسلام اور روشن فکر افراد پر خاص طور پر زور دیا کہ وہ اپنے اللہ کی رضا کے لیے اور طاغوت کے خوف کے بغیر ان مسائل کے بارے میں اپنے موقف کا اعلان کریں۔3جولائی 2017کو آیۃ اللہ خامنہ ای نے ایک مرتبہ پھر مسئلہ کشمیر کا اس وقت ذکر کیا جب وہ ایران کی اعلیٰ عدلیہ کے اراکین سے میٹنگ کررہے تھے جس میں ایران کے چیف جسٹس آیت اللہ صادق آملی لاریجانی بھی موجود تھے۔ انھوں نے اپنے ملک کی عدلیہ سے کہا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے واقعات اور ان جیسے دیگر مسائل کا قانونی پہلو سے جائزہ لیں اور اس طرح کے بین الاقوامی مسائل پر ایک سرکاری نقطۂ نظر اختیار کریں۔(ف،م)

مزید پڑھیں  چیف جسٹس کا ڈیم تعمیر فنڈ : کراچی کے ایک ادارے نے خطیر رقم جمع کروا دی، پورے ملک کے طبقہ امراء لیے شاندار مثال قائم

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments