مولانا فضل الرحمٰن ن لیگ کو چھوڑ کر، کس سے اتحاد کر نے جارہے ہیںاہم خبر آگئی

لاہور (نیوزڈیسک): سینئر تجزیہ کار ہارون رشید نے نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب (ن) لیگ کے اندر سے ہی لوگ مدد کیلئے تیار ہو گئے تو اپوزیشن کو وہ حالات مل گئے جن میں حکومت کیخلاف کام کیا جا سکتا ہے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کے اندر سے مدد کرنے والوں کی حتمی تعداد کے بارے میں بتانا تو شائد ممکن نہیں البتہ ان کے مطابق اپوزیشن کا کہنا ہے کہ انہیں 42 لوگوں کی تائید حاصل ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ 60ارکان اسمبلی کی حمایت کرنے والے مولانا فضل الرحمان نے مسلم لیگ نون کی حمایت ترک کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے ۔ شریف خاندان دانتوں سے ہر چیز کو پکڑ کے رکھتے ہیں اور چاہتے ہیں سب ان کے خاندان ہی میں رہے۔ ن لیگ کے ارکان اسمبلی کے ترقیاتی منصوبے منظور ہی نہیں ہوتے تو اپوزیشن کا تو سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ ہارون رشید کا کہنا تھا کہ حاصل بزنجو کے مطابق حکومت جانے کے 90 فیصد امکانات موجودہیں۔یہ بھلا کیسے ہو سکتا ہے کہ اچانک ساری ن لیگ بغاوت کر گئی۔ مینگل صاحب مل گئے، پھر جمعیت علماءاسلام گئی، ہارون رشید کے مطابق جیسے آگ تیزی کے ساتھ پھیلتی ہے ویسے ہی نون لیگ میں بغاوت ہونے لگے تاہم اب بھی اگر نوازشریف کوشش کریں اور مولانا فضل الرحمان مدد کریں تو صورتحال بہتر ہو سکتی ہے۔ مگر سوال یہ ہے کہ سرکاری پارٹی کے ارکان اس کیخلاف بغاوت کیلئے کیوں کھڑے ہو گئے ان سے ایسی کیا بدسلوکی ہوئی یہ سب ہو گیا۔
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  جان بولٹن پاکستان کیلئے نرم پالیسی کے حق میں ہیں ٗبھارتی اخبار