میں پاکستان کی پہلی خاتون آرمی چیف بننا چاہتی ہوں۔ مردان کیڈٹ کالج کی طالبہ دُرخانے

: پاکستان کی خواتین کسی بھی شعبے میں مردوں سے کسی طور پیچھے نہیں ہیں۔ خواتین نے زندگی کے ہر شعبے میں مردوں کے شانہ بشانہ کام کر کے اپنی صلاحیتوں اور قابلیتوں کا لوہا منوایا ۔ پاکستانی طلبا کے ساتھ ساتھ طالبات بھی زندگی کے مختلف شعبوں میں ترقی حاصل کر رہی ہیں۔ حال ہی میں مردان کیڈٹ کالج کی 13 سالہ طالبہ کے بیان نے میڈیا کی توجہ اپنی جانب مبذول کروا لی ہے۔مردان کے کیڈٹ کالج کی طالبہ دُرخانے بنوری نے اپنے بیان میں کہا کہ وہ پاکستان کی پہلی خاتون آرمی چیف بننے کی خواہشمند ہے۔ پاکستان کے شمال مغربی علاقہ میں یہ پاکستان کا پہلا گرلز گیڈٹ اسکول ہے جسے گذشتہ سال کے آغاز میں تعمیر کیا گیا۔ دُرخانے نے خبر ایجنسی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ جب ایک عورت ملک کی وزیر اعظم بن سکتی ہے ، وزیر خارجہ بن سکتی ہے، اسٹیٹ بنک کی گورنر بن سکتی ہے تو آرمی چیف بھی بن سکتی ہے۔دُرخانے کا کہنا تھا کہ میں اسے ممکن بناؤں گی اور آپ سب دیکھیں گے۔ کیڈٹ کالجز جو حکومت کے زیر انتظام چلتے ہیں ، میں ملٹری ایجوکیشن برانچ کے افسران بھی طلبا کو تعلیم دیتے ہیں۔ گرلز کیڈٹ کالج کے پرنسپل بریگیڈئیر (ر) جاوید سرور نے کہا کہ ہماری طالبات کو تیار کیا جاتا ہے کہ وہ جو چاہیں ، جس شعبے میں جانا چاہیں جا سکتی ہیں۔ میں چاہتا ہوں کہ اپنی سمجھداری سے یہ تمام طالبات معاشرے میں ہونے والی نا انصافیوں کا مقابلہ کریں اور یہ صرف تب ہی ممکن ہے جب انہیں تعلیم دی جائے۔ دُرخانے ایسی لڑکیوں کے لیے ایک مثال ہے۔ ایسی طالبات اور ان کے عزائم ملک و معاشرے میں خواتین کی کامیابی کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  سوتیلے باپ نے 11سالہ بیٹی کو زیادتی کا نشانہ بناڈالا