نقیب اللہ قتل کیس ، رائو انوارسمیت پوری ٹیم گرفتار

کراچی (نیوز ڈیسک)کراچی میں نقیب اللہ محسود قتل کیس کی تحقیقات بڑی سرعت سے آگے بڑھ رہی ہیں۔پولیس افسر رائو انوا ر کے گرد گھیرا تنگ ہوتا جا رہا ہے ۔ عہدے سے ہٹائے جانے اور بیرون ملک جانے کی اجازت نہ ملنے کے بعد اب ایک بری خبر انکا انتظار کررہی ہے۔ان کو انکی پوری پولیس ٹیم سمیت گرفتارکرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔نجی ٹی وی چینل نیوز قبائلی نوجوان نقیب اللہ کی پولیس مقابلے میں ماورائے عدالت ہلاکت میں ملوث پولیس افسر راؤ انوار کے گرد گھیرا مزید تنگ ہوگیا۔ ذرائع نے بتایا کہ راؤ انوار کے مبینہ پولیس مقابلے کی تحقیقات کرنے والی ٹیم کا اجلاس ہوا جس میں تحقیقاتی ٹیم کے ارکان کے علاوہ اسپیشل برانچ کے افسران اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔تحقیقاتی کمیٹی اور محکمہ انسداد دہشت گردی سندھ کے سربراہ ایڈیشنل آئی جی ثنااللہ عباسی نے اجلاس کی صدارت کی۔ اجلاس میں سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کو ان کی پوری پولیس پارٹی سمیت گرفتار کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ حکام نے ضلع ملیر کے تمام ایس ایچ اوز کو بھی تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔واضح رہے کہ کراچی کے علاقے شاہ لطیف ٹاؤن میں مشکوک پولیس مقابلے میں کپڑوں کے تاجر نقیب اللہ محسود سمیت 4 افراد کو قتل کرنے کے الزام میں راؤ انوار کو ایس ایس پی ملیر کے عہدے سے ہٹایا جاچکا ہے۔
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  پنجاب پولیس پر اب میرا بھروسہ نہیں ہے، آصف زرداری نے کو ن سی پولیس بلوائی ہے ؟ حیرا ن رہ جائیں گے