نیو ایئر نائٹ پر ڈیفنس میں پولیس اہلکار کو گاڑی سے کچلنے والے ملزمان کے ساتھ ایسا کام کردیا گیا کہ اب کوئی ایئر نائٹ کا خواب میںبھی نہیں سوچے گا

لاہور (نیوزڈیسک) پولیس نے ڈیفنس کار حادثہ میں پولیس اہلکار کی شہادت کا سبب بننے والے تمام ملزمان گرفتار کر لیے ہیں۔حکومتِ پنجاب کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ پر ملزمان سعید، طٰہٰ اور مصطفی منیر کی گرفتاری کا اعلان کیا گیا۔ حکومت پنجاب کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ ملزمان میں گاڑی کا مالک، ڈرائیور اور اسکا ہمراہی شامل ہیں۔سی سی پی او لاہور کی ہدایت پر واقعہ کی مکمل تفتیش کیلئے ڈی آئی جی انویسٹی گیشن سلطان احمد چوہدری کی زیرصدارت تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی گئی جس نے حادثے کے بعد فوری جائے حادثہ کا ملاحظہ کیا اور تمام شواہد اکٹھے اور عینی شاہدین کے بیانات قلمبند کیے ۔واقعہ کی ایف آئی آر میں 302، 353، 324، 114، 109 اور 7ATA کی دفعات بھی شامل کردی گئی ہیں۔منگل کے روز شہیدپولیس اہلکارکی نمازجنازہ سرکاری اعزازکے ساتھ پڑھائی گئی جبکہ واقعہ میں زخمی پولیس اہلکارکوبہترین طبی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں۔واضح رہے کہ نیو ایئر نائٹ کے موقع پر ڈیفنس میں تیز رفتار کار نے 2 پولیس اہلکاروں کو ٹکر ماری تھی جس کے نتیجے میں ایک اہلکار موقع پر ہی شہید جبکہ دوسرا شدید زخمی ہوگیا تھا ۔ابتدائی طور پر پولیس اہلکاروں کو ٹکرمارنے والی گاڑی میں سوار مصطفیٰ منیر کو مریم نواز کے داماد راحیل منیر کا چھوٹا بھائی قرار دیا گیا تاہم نواز شریف کی صاحبزادی نے ایسی خبروں کی تردید کردی تھی۔
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  اسلام ہائیکورٹ:الیکشن کمیشن کا11اپریل کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار