ٹرمپ کی دھمکیوں نے ٹرمپ کو کہیں کا نہ چھوڑا ۔۔۔افغانستان میں ٹرمپ مخالف ایسا کام شروع کردیا گیاکہ

واشنگٹن(نیوزڈیسک) امریکا کے سیکریٹری دفاع جمیز میٹس نے کہا ہے نئے سال میں پینٹا گون افغان فورسز میں مزید عسکری مشیر شامل کر ے گا کیونکہ امریکا نے افغان فورسز کی مدد سے خطے میں جنگیں جیتیں ہیں۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق سالِ نو سے قبل پریس بریفنگ میں ا مر یکی سیکریٹری دفاع کا کہنا تھا ہم مزید امریکی فورسز اور عسکری مشیر افغانستان کی فوج میں شامل کریں گے، کیونکہ آپ جانتے ہیں افغانیوں کے پاس ایسے لوگ موجود نہیں تھے اور وہ اس طرح لڑنے کیلئے بھی تیار نہیں تھے جیسا ہم چاہتے تھے۔افغان فورسز کو طالبان کیخلاف جنگ جیتنے میں مزید وقت درکار ہونے کی وضاحت کرتے ہوئے انکا کہنا تھا اگر ایک فوج تشکیل دی جائے اور اسے بیک وقت حالات کو معمول پر لانے اور لوگوں کے تحفظ کا کام دیا جائے تو اسے اپنی کارکردگی دکھانے میں وقت لگتا ہے،افغان فورسز کیساتھ مزید امریکی مشیروں کو منسلک کرنے سے ان کی تعداد میں اضافہ ہوگا اورمیدانِ جنگ میں کارکردگی مزید بہتر ہوگی۔خیال رہے امریکی سیکریٹری اسٹیٹ کا بیان اس نئی امریکی حکمت عملی پر روشنی ڈالتا ہے جس کا اعلان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ برس 21اگست کو اپنی ایک تقریر کے دوران کیا تھا ۔ ٹر مپ انتظامیہ کا مقصد افغانستان میں امریکی فوجیوں پر اوباما انتظامیہ کی جانب سے عائد کی گئی پابندیاں اٹھانا ہے تاکہ وہ آزادانہ طور پر اپنا د فاع کر سکیں اور افغان فورسز کی مدد کر سکیں۔پینٹا گون حکام کا کہنا ہے نئی امریکی حکمت عملی کی مدد سے افغان فورسز کیساتھ تعاون میں مزید بہتری آئی تاہم 18ء میں امریکی فوجی مشیر کی افغان فورسز میں کور کمانڈرز کی سطح کے بجائے بٹایلین سطح پر شمولیت سے مدد کی جائے گی ۔ ا فغان فورسز اب گزشتہ برس سے زیادہ فضائی حملوں کی درخواست کریں گے جو افغانستان طالبان کی آمدن کے وسائل کو نشانہ بنا سکتے ہیں ۔ افغان فورسز میں امریکی مشیروں کی شمولیت سے متعلق دفاعی تجزیہ نگاروں نے خبردار کیاہے کہ امریکیوں کی زندگی کو مزید خطرہ لاحق ہو سکتا ہے کیونکہ وہ اپنے دشمن سے محاذ پر کچھ ہی دوری پر ہوں گے
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  جاپانی لڑکی ہالی وڈ کی ایک فلم دیکھ کر سائنس دان بن گئی ،دنیا حیران