پاکستان کی نامور یونیورسٹی میدان جنگ بن گئی۔۔۔وجہ ایسی کہ جان کر آپ کے بھی ہوش اڑ جائیںگے

لاہور (نیوزڈیسک) پنجاب یونیورسٹی میں 2 طلبہ تنظیموں کے درمیان ہونے والا تصادم خطرناک صورت اختیار کرگیا، مضروب فریق نے وی سی آفس کے باہر دھرنا دیا تو پولیس نے شیلنگ کرکے انہیں بھگادیا، مشتعل طلبہ نے کیمپس پل کو ہر طرح کی ٹریفک کیلئے بند کردیا ہے۔تفصیلات کے مطابق طلبہ تنظیم اسلامی جمعیت طلبہ کی جانب سے پنجاب یونیورسٹی کے کیمیکل انجینئرنگ گراؤنڈ میں آج (پیر کو) پائنیرز فیسٹیول کرایا جانا تھا تاہم ایک لسانی تنظیم کے طلبہ نے رات 4 بج کر 45 منٹ پر کیمیکل انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ کو آگ لگادی ۔ شدت پسند طلبہ کی جانب سے فیسٹیول کے انتظامات تہس نہس کردیے گئے جبکہ جمعیت کے متعدد کارکنان کو تشدد کا بھی نشانہ بنایا گیا۔واقعے کی اطلاع ملنے پر اسلامی جمعیت طلبہ کے کارکنان کثیر تعداد میں جمع ہوگئے اور واقعے کے خلاف احتجاج شروع کردیا۔ مشتعل طلبہ نے وائس چانسلر کے دفتر کے باہر دھرنا دے دیا تاہم پولیس نے آنسو گیس کی شیلنگ کرکے انہیں منتشر کردیا۔پولیس کی جانب سے طاقت کے استعمال پر جمعیت کے کارکنان مشتعل ہوگئے اور انہوں نے ہنگامہ آرائی شروع کردی جبکہ بعض طلبہ نے کیمپس پل کو ہر طرح کی ٹریفک کیلئے بلاک کردیا۔ یونیورسٹی میں ہنگامہ آرائی کے دوران جمعیت اور لسانی تنظیم کے طلبہ آمنے سامنے بھی آئے اور ایک دوسرے کے خلاف نعرے بازی اور پتھراؤ کیا جس سے کئی طلبہ زخمی ہوئے۔بعض مشتعل طلبہ نے ایس پی اقبال ٹاؤن کی گاڑی کے شیشے بھی توڑ دیے۔وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی ڈاکٹر ذاکر زکریا نے ہنگامہ آرائی کا نوٹس لے لیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دونوں طلبہ تنظیمیں آپس میں اکثر ہی جھگڑتی رہتی ہیں ، ذمہ دار افراد کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  عدالتوں کے ذریعے عوامی قیادت نہیں چھینی جاسکتی،نوازشریف