چیتا اور ریسنگ کار کے درمیان مقابلہ، یہ مقابلہ کون جیتا؟

کرہ ارض پر تیز ترین دوڑنے والا جانور چیتا ہے جس کا مقابلہ کسی بھی اور جانور کے بس کی بات نہیں، لیکن کیا یہ جانور جدید دور کی تیز ترین فارمولا ون ریسنگ کار سے بھی جیت سکتا ہے؟ اس دلچسپ سوال کا جواب جاننے کے لئے جنوبی افریقہ کی ایک ہوائی پٹی پر ایک انوکھی ترین ریس کا اہتمام کیا گیا۔
ڈیلی سٹار کے مطابق یہ مقابلہ ریسنگ چیمپئین جین ایرک اور ایک چیتے کے درمیان ہوا۔ جین ایرک جدید ترین الیکٹرک ریسنگ کار ’فارمولا ای‘ میں سوار تھے جو ہوائی پٹی کے اوپر دوڑ رہی تھی جبکہ چیتا ان کے متوازی گھاس اور جھاڑیوں سے ڈھکی زمین پر دوڑ رہا تھا۔

مزید پڑھیں  Ya Quddus Ki Fazilat#Beautiful...

چیتا اور جدید ترین فارمولا ای ریسنگ کار، دونوں ہی محض تین سیکنڈ میں اپنی انتہائی رفتار پر پہنچ سکتے ہیں، اور اس ریس کے دوران یہ بات ثابت بھی ہو گئی۔ ریس کا آغاز ہوا تو پلک جھپکتے میں ہی چیتا کار سے آگے نکل گیا اور ایک وقت پر تو یوں لگ رہا تھا کہ دنیا کی جدید ترین ریسنگ کار اس جانور کا مقابلہ نہیں کر پائے گی۔ ریس کے اختتام کے قریب چیتا اور ریسنگ کار تقریباً برابر آ چکے تھے لیکن اختتام سے ذرا پہلے ریسنگ کار ذرا سی آگے نکل گئی، البتہ یہ سبقت چند ملی میٹر سے زیادہ نا تھی۔ یعنی عملی طور پر دونوں نے تقریباً ایک ہی وقت پر ریس کا اختتام کیا۔

مزید پڑھیں  maulana fazal rehman got angry...

فارمولا ای کے بارنی آلیحاندرو اگاگ نے اس دلچسپ مقابلے کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا ”ہمیں معلوم تھا کہ فارمولا ای اور چیتے کی کارکردگی میں مماثلت ہے لیکن ہم ان کے درمیان ریس کا نتیجہ دیکھنا چاہتے تھے۔ شروع میں تو لگ رہا تھا کہ چیتے کا مقابلہ مشکل ہے لیکن اچھی بات یہ ہوئی کہ فارمولا ای چند ملی میٹر سے سبقت لے گئی۔ یہ محض ایک ریس نہیں تھی بلکہ اس کا مقصد معدومیت کے خطرے سے دوچار جنگلی حیات کی اہمیت اجاگر کرنا بھی تھا، خصوصاً چیتے کے بارے میں، جن کی قدرتی ماحول میں کل تعداد اب 7000 سے بھی کم رہ گئی ہے۔“

مزید پڑھیں  dulha jazbati ho gya apni hi s...

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments