کرکٹ بورڈ میں مبینہ کرپشن‘ FIAایکشن میں آگیا

urdu tv onlineلاہور جدت ویب ڈیسک :سپاٹ فکسرز کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ کے اعلی عہدیدار ایف آئی اے کے شکنجے میں آ گئے اور مبینہ طور پر مالی بے ضابطگیوں ،اختیارات کے ناجائز استعمال اور سابق چیئرمین پی سی بی کے لئے 43 لاکھ روپے سے رینٹ پر لگژری گاڑی لینے کی تحقیقات میں چیف آپرٹینگ آفیسر پی سی بی سبحان احمد، ڈائریکٹر کرکٹ آپریشنز ہارون رشید سمیت 5 افسروں کو 27 دسمبر کو طلب کر لیا گیا ہے۔ ایف آئی اے کے اینٹی کرپشن سرکل میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے اعلی افسروں کے خلاف اختیارات کے ناجائز استعمال ، ٹھیکوں اور کرکٹ اکیڈمیز کو پیسوں کی ادائیگی میں مبینہ کرپشن کی تحقیقات جاری ہیں۔کیس میں سب سے بڑی انکوائری سابق چیئر مین پی سی بی کیلئے 43لاکھ روپے سے رینٹ پر لی جانے والی پراڈو کی ہے ۔ایف آئی اے ذرائع کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ کے افسران پر سنگین الزامات ہیں جن کیخلاف بڑے پیمانے پر انکوائری کی جارہی ہے ۔کیس میں تحقیقات کے دائرہ کار کو آگے بڑھانے کے لئے انویسٹی گیشن افسر سجاد مصطفی ،سی او او سبحان احمد ،ڈائریکٹر کرکٹ آپریشنز ہارون رشید ،منیجر لا جسٹک مقصود احمد ،جنرل منیجر آپریشن لاجسٹک اسد مصطفی اور آفیسر لاجسٹک فاروق اقبال کو 27 دسمبرکو طلب کیا گیا ہے ۔اس حوالے سے تمام افسران کو پاکستان کرکٹ بورڈ کے ایڈریس پر نوٹسز بھی جاری کر دیئے گئے ہیں ۔یادرہے کہ ایف آئی اے نے پی ایس ایل سپاٹ فکسنگ سکینڈل کی تحقیقات کا آغاز بھی کیا تھا لیکن پھر بورڈ کی درخواست پر یہ سلسلہ روک دیا گیا۔

مزید پڑھیں  کالا باغ ڈیم پاکستان کا مستقبل ہے، اگر نام کا مسئلہ ہے تو بے نظیر بھٹو ڈیم رکھ لیا جائے،چیف جسٹس
دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments