کچھ علامات جن سے دل کا دورہ پڑنے کا علم ہو سکتا ہے

دل کا دورہ پڑنا  تب ممکن ہوتا ہے جب کولیسٹرول کی سطح بلند ہو خون کی سپلائی میں رکاوٹ ہو رہی ہو اور دل صحیح طرح سے پانا کام نہ کر پا رہاہو ۔  اس کا علم تو ٹھیک طور پر  تب ہی ہوتا ہے جب باقاعدہ ڈاکٹر سے معائنہ کرایا جائے جس کے بعد معلوم ہو سکتا ہے کہ کیا مستقبل میں اس  طرح کا کوئی خطرہ تو نہیں ۔ لیکن یاد رکھیں ہمارے جسم میں موجود قوت مدافعت دراصل ایک ایسا سسٹم ہے جو صحت کے بارے میں وقت فوقتا سگنلز بھیجتا رہتا ہے جس کو ہم مرض کے ابتدائی اثرات کہ سکتے ہیں ان کے ذریعے علم ہو سکتا ہے ہے کہ جسم میں کہا گڑ بڑ ہے اور کیا بیماری ہونے والی ہے ۔ایسے ہی دل کے مسائل کی کچھ علامات ہوتی ہے جس سے دل کے دورے کا علم ہو سکتا ہے

مزید پڑھیں  حضورﷺ بیماریوں کا علاج کیسے کرتے تھے؟ یہ تحریر آپ کو ضرور پڑھنی چاہئیے

نیند کا روٹین

انسان کے جسمانی عوامل بھی ایک خاص روٹین اور خاص عادات کی پیروی کرتے ہیں۔ ایسے ہی نیند بھی ایک خاص روٹین کے تحت آتی ہے۔ اگر کچھ عرصے سے اس روٹین میں تبدیلیاں رونما ہوئی ہوں، نیند میں خلل یا نیند آنے میں دشواری محسوس ہونے لگی ہو  تو یہ ایک واضح علامت ہے جسم جس کی اطلاع دے رہا ہوتا ہے۔

شدید تھکن

جسم میں اچانک محسوس ہونے والی شدید تھکن اور کمزوری بھی دل کا دورہ پڑنے کی ایک علامت ہے۔ دل کا مناسب طریقے سے کارکردگی نہ کر پانا جسم کو کمزور اور تھکن زدہ بنا سکتا ہے۔

مزید پڑھیں  Arthritis Treatment - Natural ...

نظام ہضم

مرچ مصالحے دار کھانا کھانے کے بعد نظام ہضم میں بگاڑ پیدا ہو جاتا ہے۔ لیکن اگر ہاضمہ خراب ہونے کی کوئی خاص وجہ نہ ہو تو یہ مستقبل میں دل کے دورے کی نشاندہی کر رہا ہوتا ہے۔

سانس کی کمی

دل تک آکسیجن کی مناسب مقدار نہ پہنچ پانا سانس کی کمی کا شکار کرتا ہے۔ یہ علامت دل کے دورے میں تبدیل ہو سکتی ہے۔

گھبراہٹ

اگر کسی خاص وجہ کے بغیر پریسشانی یا گھبراہٹ کا غلبہ ہونے لگے تو یہ علامت دل کے دورے کا خطرہ ظاہر کرتی ہے۔

کمزور بازو

 

جب دل کو آکسیجن کی مناسب مقدار فراہم نہیں ہوپاتی تو ریڑھ کی ہڈی میں ہونے والے رد عمل بازوؤں میں درد پیدا کر کے انہیں کمزور بانا دینگے۔ یہ عمل خاص طور پر اُلٹے بازو کے ساتھ ہونے کا خدشہ ہوتا ہے۔ اگر اکثر اس قسم کی علامت ظاہر ہونے لگے تو اس کا مظلب ہے کہ جسم دل کے دورے کی آگاہی دے رہا ہے۔

مزید پڑھیں  کھانے کی عادت میں تبدیلی لائے اور آسانی سے وزن کم کریں

اگر کسی کو بھی اس طرح کے مسائل کا مسلسل سامنا ہو رہا ہے تو اسے کبھی بھی ڈاکٹر کے پاس جانے میں تاخیر نہیں کرنی چاہئے کیونکہ یہ علامات ظاہر کرتی ہے کہ دل ٹھیک سے کام نہیں کر رہا اس لئے مزید پچیدگیوں سے بچنے کے لئے اور خود ہی ٹھیک ہونے کی سوچ کو کود پر حاوی نہ ہونے دیں اور ڈاکٹر سے اپنا علاج کرائیں

 

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments