Dharna Deal

کے قائدین نے شہدا کے خون کا 21کروڑ روپے میں سودا کیا

تحریک لبیک نے فیض آباد دھرنے سے کئے گئے معاہدے سے لاتعلقی کے اعلامیہ میں کہا ہے کہ پیر افضل قادری اور مولانا خادم حسین رضوی کی جانب سے کیا گیا معاہدہ شہدا کے خون سے غداری کے مترادف ہے ہم ایسے کسی معاہدے کو تسلیم نہیں کریں گے ۔فیض آباد دھرنے کے قائدین نے شہدا کے خون کا 21کروڑ روپے کا سودا کیا ۔
رانا ثنا ء اللہ سمیت دیگر ذمہ دار ان کے خلاف کارروائی کئے بغیر ختم نبوت کی تحریک کو کسی صورت ختم نہیں کیا جا سکتا ۔پیر افضل قادری اور مولانا خادم حسین رضوی قوم کے سامنے وضاحت دیں کہ کارکنان اہلسنت کے قتل عام کے بعد جہاں پوری حکومت گرائی جا سکتی ہے وہاں پر محض ایک وزیر کی برطرفی پر کیوں اکتفا کیا گیا ۔ختم نبوت کے غداروں کو منطقی انجام تک پہنچائے بغیر چین سے نہیں بیٹھیں گے اور اس معاملہ پر تمام دینی جماعتوں سے بھی مشاورت کی جا جاری ہے 12ربیع الاول کے بعد حکومت کے مخالف تحریک کا اعلان کریں گے اور جلد پریس کانفرنس کے ذریعے اگلے لائحہ عمل کا اعلان کیا جائے گا ۔
شہدا کے خون نے پیرافضل قادری اور مولانا خادم حسین رضوی کا چہرہ پوری قوم کے سامنے بے نقاب کر دیا ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ ہم علامہ ڈاکٹر اشرف جلالی کے دھرنے کی مکمل حمایت کا اعلان کرتے ہیں۔واضح رہے کہ بعض ذرائع کے مطابق شہدا کے خون کا پانچ کروڑ روپے میں معاہدہ کیا گیا ہے لیکن اس کے بارے میں کوئی حتمی رپورٹ منظر عام پر نہیں آ سکی۔

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  الیکشن 2018 : این اے 130 لاہور میں کس جماعت کی ٹکٹ کے لیے کون بھاگ دوڑ کر رہا ہے ؟ کس کو ٹکٹ ملنے کا امکان ہے اور اہل علاقہ کے نزدیک فیورٹ کون ہے ؟ شاندار سیاسی تبصرہ ملاحظہ کیجیے