گوگل نے ایسے صارفین کے لیے اپنی نئی سرچ ایپ متعارف کرائی ہے جن کو اکثر انٹرنیٹ مسائل کا سامنا رہتا ہے۔

اگر آپ اسمارٹ فون استعمال کرتے ہیں تو یہ جانتے ہوں گے کہ گوگل ایپ اینڈرائیڈ میں تو ہوتی ہی ہے جبکہ اسے آئی او ایس میں ایپ اسٹور سے ڈاﺅن لوڈ کیا جاسکتا ہے۔

تاہم گوگل گو کو اینڈرائیڈ اور آئی او ایس صارفین کو داﺅن لوڈ کرنا ہوگا جو کہ ٹوجی کنکشن پر بھی سرچ، موسم اور آواز سے حرکت میں آنے والے فیچرز تک تیز رسائی فراہم کرے گی۔

پانچ ایم بی سے بھی کم حجم کی اس ایپ میں ڈیٹا کی بچت کے لیے کارڈ والے انٹرفیس کی بجائے بٹن دیئے گئے ہیں۔

فوٹو بشکریہ گوگل
گوگل اس ایپ کے ذریعے ترقی پذیر ممالک میں خراب انٹرنیٹ رفتار سے متاثر صارفین کو ہدف بنانا چاہتا ہے، تاہم یہ کسی سے پیچھے نہیں۔

اس کا ایک خاص فیچر امیج سرچ ہے جس سے آپ فوری طور پر اپنی پسند کی تصویر تلاش کرکے دوست کو بھیج سکتے ہیں۔

گوگل نے اگست میں اس ایپ کو آزمائشی بنیادوں پر سرچ لائٹ کے نام سے متعارف کرایا تھا تاہم اب اسے بدل کر یوٹیوب گو (لائٹ ورژن) کی طرز پر گوگل گو رکھ دیا گیا ہے۔

گوگل اب کم میموری والی ڈیوائسز کے لیے اینڈرائیڈ گو آپریٹنگ سسٹم کی تیاری پر بھی کام کررہا ہے۔

اور گوگل ان گو ایپس کے ذریعے مزید ایک ارب صارفین کو اپنی کمپنی کا حصہ بنانا چاہتی ہے اور اس مقصد کے لیے اس کی نظریں بھارت، پاکستان اور افریقہ وغیرہ پر مرکوز ہیں۔

Comments

comments