یہ اٹلی کے سابق وزیراعظم برلسکونی کا مجسمہ ہے یا وہ خود ہیں؟ اس سوال کا درست جواب آپ کبھی دے ہی نہیں سکتے کیونکہ۔۔۔

 اٹلی کے سابق وزیراعظم سیلویو برلسکونی جنسی سکینڈلز سمیت کئی طرح کے الزامات اور مقدمات کی وجہ سے پہلے ہی خبروں میں رہتے ہیں۔ اب ان کی کچھ ایسی تصاویر منظرعام پر آ گئی ہیں کہ سوشل میڈیا پر صارفین نے گویا ایک ’کوئز پروگرام‘ شروع کر دیا اور پوچھا جا رہا ہے کہ آیا یہ برلسکونی خود ہیں یا ان کا موم کا بنا ہوا مجسمہ؟اور آپ یہ جان کر دنگ رہ جائیں گے کہ اکثر لوگ اس سوال کا غلط جواب دے رہے ہیں اور یقینا آپ بھی اس کا درست جواب دینے سے قاصر رہیں گے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق برلسکونی گزشتہ روز اپنی پارٹی کی ایک میٹنگ میں شریک ہوئے اور بعد ازاں ایک چیٹ شو میں شرکت کی۔ یہ تصاویر ان تقریبات میں بنائی گئی جن میں ان کا ماتھا نوجوانوں کی طرح صاف اور بے شکن ہے اور چہرے پر انتہائی مصنوعی مسکراہٹ ہے۔

مزید پڑھیں  ترکی کوبڑا جھٹکا لگ گیا۔۔۔انتہائی بری خبر سامنے آگئی

81سالہ برلسکونی ماضی میں ہیئرٹرانسپلانٹ اور پلاسٹک سرجری کرواتے رہے ہیں اور یہ انہی کا شاخسانہ ہے کہ اس بار جب وہ طویل عرصے بعد منظرعام پر آئے تو ایسے لگ رہے تھے جیسے کوئی مومی پتلا زندہ ہو گیا ہو۔ رپورٹ کے مطابق برلسکونی کے خلاف ماضی میں ایک 17سالہ لڑکی سے معاشقے ، اور کم سن جسم فروش لڑکی سے پیسوں کے عوض تعلق استوار کرنے سمیت کئی الزامات کے تحت مقدمات قائم ہوئے اور کئی میں انہیں سزا بھی ملی جو بعد میں ختم کر دی گئی۔ اب بھی ان کے خلاف کئی مقدمات چل رہے ہیں۔کھرب پتی برلسکونی دوسری جنگ عظیم کے بعدسے سب سے طویل عرصے کے لیے اٹلی کے وزیراعظم رہے ہیں۔ اس وقت عدالت نے ان کے سیاست میں حصہ لینے پر پابندی عائد کر رکھی ہے جس کے خاتمے کے لیے وہ قانونی جنگ لڑ رہے ہیں اور کہا جا رہا ہے کہ اگر وہ پابندی ختم کروانے میں کامیاب ہو گئے تو ایک بار پھر وزیراعظم بن سکتے ہیں۔

مزید پڑھیں  سعودی عر ب پر میزائل حملہ، ہر طرف بھاگ دوڑ مچ گئی، سعودی فورسز حرکت میں آگئی

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments