urdu tv online

4 بچوں کی ہزاروں سال پرانی قبر دریافت، لیکن جب ماہرین نے سب سے چھوٹے بچے کی قبر کھولی تو حیران پریشان رہ گئے کیونکہ پہلے 3 میں تو۔۔۔

urdu tv onlineماہرین آثار قدیمہ نے مصر میں 4بچوں کی ہزاروں سال پرانی قبریں دریافت کی ہیں جن میں پہلے تین بچوں کو کفن دے کر اہتمام کے ساتھ دفن کیا گیا تھا لیکن جب ماہرین نے چوتھے بچے کی قبر کھولی تو اس کی باقیات ایسی حالت میں موجود تھیں کہ ماہرین ششدر رہ گئے. ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق یہ قبریں مصری وزارت آثارقدیمہ اور سویڈن کی لنڈ یونیورسٹی کے ماہرین نے دریافت کی ہیں جنہوں نے بتایا ہے کہ ان تمام بچوں کی عمر 10سال سے کم تھی.پہلی تین قبروں میں 7سے 10سال کی عمر کے بچوں کو کفن اور قدیم قیمتی اشیاءکے ساتھ دفن کیا گیا تھا لیکن چوتھے بچے کو لاپروائی کے ساتھ قبر میں پھینک کر اوپر پتھر اور خس و خاشاک سے ڈھانپ دی گئی تھی. ان کی باقیات کے تجزئیے کے بعد یہ حیران کن انکشاف بھی ہوا کہ اس 5سے 7سال کی عمر کے چوتھے بچے کو مرنے سے پہلے شدید زخم بھی آئے تھے.جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ اس بچے کا باقی تینوں کے ساتھ کوئی تعلق نہیں تھا. رپورٹ کے مطابق پہلے تین بچوں کی قبروں سے تعویذ، قیمتی دھاتوں کے بنے ہار اور برتن وغیرہ برآمد ہوئے . قبریں دریافت کرنے والی ماہرین کی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر مصطفی وزیری کا کہنا تھا کہ ”جبل السلسیلہ کے علاقے میں دریافت ہونے والی ان قبروں کا تعلق 1401سے 1493قبل مسیح سے ہے. اس زمانے میں اس جگہ پر پتھروں کی کٹائی اور کان کنی کی جاتی تھی. ان بچوں کی موت کی وجوہات جاننے کے لیے ہم مزید تحقیق کر رہے ہیں. “واضح رہے کہ اس علاقے سے پہلے بھی بچوں کی کئی قبریں دریافت ہو چکی ہیں جن میں ایک ایسا تھا جس کی موت کے وقت عمر محض 2سال تھی.

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  فیملی سے ملاقات۔۔۔کلبھوشن یادیو بھی میدان میں آگیا:بھارتی میڈیا بارے ایسا بیان دےدیاکہ