7.3 shiddat ka zalzala

عراق اور ایران کے سرحدی علاقے میں آنے والے 7 اعشاریہ3 شدت کے زلزلے سے ہلاکتوں کی تعداد350سے زائد افراد ہلاک ہو گئی ہیں جبکہ متاثرہ علاقے میں امدادی کاروائیوں کا سلسلہ جاری ہے ایران اور عراق کے علاقوں میں ہلاکتوں کی تعداد بڑھ رہی ہے۔ سب سے زیادہ نقصان عراق کی سرحد سے متصل ایرانی صوبے کرمانشا کے علاقے سرپل ذھاب میں ہوا ہے اب تک کی اطلاعات کے مطابق ایران اور عراق میں2ہزارکے قریب افراد زخمی ہوئے ہیں۔حکام کا کہنا ہے کہ متعدد علاقوں سے عمارتوں کے گرنے کی خبریں سامنے آرہی ہیں زلزلہ چونکہ رات گئے آیا اور کئی علاقوں میں لوگوں کو گھروں یا عمارتوں سے نکلنے کا موقع بھی نہیں ملا‘متاثرہ علاقوں میں مواصلاتی نظام تباہ ہوجانے سے نقصان کا درست تحمینہ لگانا ممکن نہیں -حکام نے خدشے کا اظہار کیا ہے کہ نقصان اب تک سامنے آنے والے اعداد وشمار سے کہیں زیادہ ہوسکتا ہے- زلزلے کے آفٹر شاکس کے خدشات پر شہریوں کی بڑی تعداد گھروں سے باہر سڑکوں پناہ لیے ہوئے ہیں۔ایران کے سرکاری نشریاتی ادارے کا کہنا ہے کہ امدادی کارکنوں کو زلزلے سے متاثرہ ملک کے مغربی علاقوں میں روانہ کر دیا گیا ہے ۔ایران میں امدادی ادارے ریڈ کریسنٹ کے سربراہ مرتضیٰ سلیم کا کہنا ہے کہ زلزلے کے نتیجے میں 8دیہات کے صفحہ ہستی سے مٹ جانے کی اطلاعات ہیں درجنوں دیہات میں بجلی اور مواصلات کا نظام متاثر ہوا ہے۔ امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق زلزلے کا مرکز عراق کے جنوبی شہر حلبجہ تھا اور اس کی زمین میں گہرائی 33.9 کلومیٹر تھی۔ایران اور عراق میں شدید زلزلے کے باعث ہلاکتوں میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے ۔ زلزلے کے جھٹکے مشرق وسطیٰ کے کئی ممالک میں محسوس کئے گئے، جب کہ شدید آفٹر شاکس کی وجہ سے متاثر علاقوں میں خوف ہراس برقرار ہے۔ آفٹرشاکس کے باعث لوگوں نے رات گھروں سے باہر گزاری۔عراق کے کردستان ریجن میں زلزلے سے متعدد عمارتیں گر گئیں جبکہ جانی نقصان کی بھی اطلاعات ہیں، سرحدی اور دور دراز علاقہ متاثر ہونے کی وجہ سے نقصانات کی اطلاعات بتدریج سامنے آرہی ہیں ، یہ خدشہ بھی ظاہر کیا جارہا ہے کہ جانی نقصان میں مزید اضافہ ہوسکتاہے۔ کویت بحرین، قطر، سعودی عرب، اردن، لبنان اوراسرائیل میں بھی زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے ہیں۔

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments

مزید پڑھیں  نیب کا شریف خاندان کے خلاف بڑا کھڑاک۔۔۔ایسا گواہ اور دستاویزات سامنے لانے کا فیصلہ کر لیا کہ نواز شریف بھی نہ جھٹلا سکیں گے