EPمسجد کے خطیب کی گالیوں اور کوسنوں کے باوجود مولانا مودودیؒ ان کے پیچھے نماز کیوں پڑھتے تھے؟ ایک شاندار حقیقت ملاحظہ کیجیے

EPمسجد کے خطیب کی گالیوں اور کوسنوں کے باوجود مولانا مودودیؒ ان کے پیچھے نماز کیوں پڑھتے تھے؟ ایک شاندار حقیقت ملاحظہ کیجیے

لاہور(ویب ڈیسک)سید ابواعلیٰ مودودی کی صاحبزادی اپنے والد کا ایک واقعہ اپنی کتاب ’’شجر ہائے سایہ دار‘‘میں لکھتی ہیں کہ ابا جان! اچھرہ کی مسجد میں بچوں کو بھی جمعہ پڑھنے ساتھ لے جاتے تھے۔

مسجد کے خطیب ایک مولانا صاحب تھے جو ابا کے بہت مخالف تھے۔ ایک جمعہ میں ابا سامنے ہی بیٹھے تھے کہ مولانا صاحب بولے’’مسلمانو! یاد رکھو، اگر کوئی مودودیہ مر جائے اور اس کو دفنا دیا جائے اور اس کی قبر پر پودا نکل آئے اور اس پودے کو کوئی بکری کھا لے تو یاد رکھو اس بکری کا دودھ پینا بھی حرام‘‘۔۔۔۔ اس کےجی نے انہی خطیب صاحب کے پیچھے نماز پڑھی اور پڑھتے رہے۔شام کو جماعت کے کارکنان نے ابا سے پوچھا’’یہ لوگ جو آپ کو برا بھلا کہتے ہیں ان کے پیچھے ہم نماز کیونکر پڑھیں‘‘؟ ابا جی نے کہا’’انہی کے پیچھے نماز پڑھیں، کیونکہ جتنا قرآن و سنت سے میں واقف ہوں وہاں کہیں نہیں لکھا کہ جو مودودی کو گالیاں دے اس کے پیچھے نماز نہیں ہوتی، (ن)

مزید پڑھیں  Arab Mard Aur Auratain Naaf Main Tail Kiyun Lagati...

EPمشہور زمانہ مسلمان بھولو پہلوان ہر روز کتنی خوراک کھاتا ، کتنی ورزش کرتا اور اپنی طاقت برقرار رکھنے کے لیے کیا کیا جتن کرتا تھا ؟ سچی کہانی ملاحظہ کیجیے

مزید پڑھیں  اسلام کے عظیم سپہ سالار

EPبے شک یہ کپڑے پھٹے پرانے ہیں مگر میرے اپنے ہیں، مجھے میرے دوستوں سے بچاؤ دشمنوں سے بچنے کا انتظام میں خود کر لوں گا۔۔۔۔ پڑھیے سچی باتیں

مزید پڑھیں  ایک نوجوان کی ماں سخت بیمار تھی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ایک د...

EPایک عقلمند بابا نے تین آدمیوں کو گزارا کرنے کے لیے تین تین مکئی کے دانے دیے ۔۔۔۔پڑھیے حکمت کی ایسی داستان جو آپ کو زندگی کا سب سے بڑا سبق دے گی

دوستوں سے شئیر کریں

Comments

comments